سب وعدے جھوٹے ثابت ہوئےحکومت وقت اور سیاسی پارٹیاں آج تک اپنے کیے گئے وعدے پورے نہیں کر پائے

وعدے تو بہت کئے گئے کہ ہم یہ کریں گے تو وہ کریں گے روٹی کپڑا مکان کے بھی واعدہ کیا بجلی کا بھی تو سکول کالج ینورسٹی ہسپتال سرکیں نوکریاں غربت کا خاتمہ تعلیم کو فروع دینا صیحت علاج ادویات تمام تر سہولیات ان سب کا وعدہ کر کے گلگت بلتستان کے سیدے سادے لوگوں سے ووٹ تو بٹور لئے گئے گھر گھر جا کر بھیک مانگے الیکشن کیمپین کے نام پر قومی خازنے خالی کر لئے پر آج بھی اعوام ہی کہتے نظر آتے ہیں کہ کیا ہوا تیرا وعدہ وہ قسم وہ ارادے
آج بھی رشوت عام ہے کسی نا کسی بہانے اعوام کو لوٹا جاتا ہے کہںسننے والا نہیں نا پولیس نا عدالت نا حکومت نا کوئی این جی او کوئی نہیں آکر کب تک یہ ملک و قوم ہوں ہی لٹتے رہیں گے ؟؟؟؟؟؟؟
یہ سب باتیں ایک طرف گلگت بلتستان کا سب سے اہم اور بڑا شہر 
سکردو .پچلے  72 گھنٹے سے مسلسل تاریکی میں ڈوبا ہوا ہے 
بجلی کی لوڈشیڈنگ  کے خلاف لوگ آحتجاج کر رہے ہیں
 وزیر برقیات کے حلقے میں اتنا لمبا لوڈشیڈنگ تو باقی جگہوں کے کیا حالات ہونگے آ خود ہی اندازہ لگا لو 
گزشتہ دنوں وزیر برقیات موصوف نے تو کہا تھا کہ سکردو میں لوڈشیڈنگ نہیں ہے مخالفین ایس ایم ایم کے زریعے غلط افواہیں پھیلا رہے ہیں
 مشینری  کے چینی موجد مسٹر لیو بھی چار روز گزرنے کے باوجود خرابی دور نہیں کر سکے ہیں ۔ پاور ہاوسسز کے بیٹھ جانے کی وجہ سے سکردو شہر اور گردونواح کے علاقوں میں مکمل بریک ڈاون اور تاریکی کا راج ہے ۔ بجلی کی طویل بندش سے شہر میں تجارتی سرگرمیاں مفلوج ہو گئ ہیں ۔ مڈل سطح کے امتحانات کی تیاری میں ہزاروں طلبہ کو شدید مشکلات پیش آرہی ہیں ، بیٹریاں چارج نہ ہونے کے باعث ہزاروں موبائل فون بند ہوگئے ہیں ، ٹیلی مواصلات کا نظام خاص 
طور پر انٹر نیٹ سروس معطل ہیں
 ان سب حائق کے باوجود ہمارے سیاسی رہنما اور سیاسی کرکن انی اپنی پارٹی کے حق میں سراپا احتجاج ہے ان کی پارٹی کے خلاف ایک لفظ سنے کو تیار نہیں آخر کب ہوش کا ناخن لیں گے یہ لوگ کب تک چند لوگوں کے ہاتھوں کٹ پتلی بنے رہیں گے کہتے ہیں کہ میرا ملک پاکستان آزاد ہے کیا ہی ہوتی ہے آزای ؟؟؟؟؟؟؟
 اگر  کوئی اچھی اور اصلاح معاشرے کے لئے کچھ لکھنا چاہیں تو لکھ کر ہیإ ارسا کریں ہمارا پتہ ہے
gbnewsone@gmail.com