سب چاہتے ہیں کہ گلگت بلتستان کو پاکستان کا با قاعدہ حصہ بنایا جائے،وزیراعلیٰ



وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے کہاہے کہ گلگت بلتستان کی آئینی حیثیت کے تعین کے حوالے سے ہم نے صرف گراس روٹ لیول پر اورتمام اسٹیک ہولڈر سے مشاورت کی بلکہ اس حوالے سے تمام سیاسی جماعتوں کی آل پارٹیز کانفرنس بھی بلائی سب کے سب پاکستان کے آئین کا باقاعدہ حصہ بننا چاہتے ہیں اور تمام جماعتوں کی یہ خواہش ہے کہ گلگت بلتستان کو پاکستان کا باقاعدہ حصہ بنایا جائے انہوں نے منگل کے روز گلگت بلتستان کے نئے گورنر میر غضنفر علی خان کی تقریب حلف برداری جس میں وزیراعظم پاکستان میاں محمد نوازشریف بھی موجود تھے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس سے قبل گلگت بلتستان کے تمام فیصلے اسلام آباد میں ہوتے تھے مگروزیراعظم نے جب گلگت بلتستان میں آئینی اصلاحات کے حوالے سے مشیر خارجہ سرتاج عزیز کی سربراہی میں کمیشن بنایا تو تاریخ میں پہلی دفعہ گلگت بلتستان کے نمائندے کو اس کمیٹی کا ممبربنایا اوراس کمیشن کے پہلے اجلاس میں ہم نے گلگت بلتستان کے تمام سٹیک ہولڈرز سے مشاورت کافیصلہ کیا ہم تمام سٹیک ہولڈرز سے ملے اور آل پارٹیز کانفرنس بھی بلائی سب کے سب پاکستان کا آئینی حصہ بننا چاہتے ہیں انہوںنے کہا کہ جب سے میں نے سیاست شروع کی ہے اس دن سے اب تک وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نوازشریف نے انتیس مرتبہ گلگت بلتستان کا دورہ کیا ہے اورہماری حکومت قائم ہونے کے بعد چارماہ کی قلیل مدت میں وزیر اعظم نے چارمرتبہ ان علاقوںکا دورہ کیا ہے یہ وزیراعظم گلگت بلتستان کے عوام سے خصوصی محبت کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔انہوںنے اپنے خطاب کے دوران میرغضنفرعلی خان کی بحیثیت گورنر تقرری پروزیراعظم پاکستان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ میرغضنفر علی خان کے خاندان کی گلگت بلتستان اور پاکستان کےلئے کی جانے والی خدمات کو نظرانداز نہیں کیا جاسکتا ہے ۔اس موقع پر انہوںنے سابق گورنر برجیس طاہر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ چوہدری برجیس طاہر نے مختصر مدت میں گلگت بلتستان کے تمام علاقوں کا دورہ کیا اورمقامی گورنرسے بڑھ کر علاقے کے عوام کی خدمت کی ہے۔انہوںنے کہا کہ جی بی کے عوام نے ہمیشہ ملک کے لیے قربانیاں دی ہےں تمام جنگوں میں ہمارے شہداءنے خون کا نذرانہ پیش کیا ہے۔ گلگت بلتستان میں آج تک مملکت خداداد پاکستان کے خلاف کوئی آواز نہیں اٹھی ہے گلگت بلتستان کے لوگ محب وطن ہیں۔ پہلی مرتبہ مسلم لیگ(ن) کو دو تہائی اکثریت ملی ہے گلگت بلتستان کے عوام نے وزیراعظم پاکستان و قا ئد عوام محمد نواز شریف کے ایجنڈے کو سراہا اور اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کو دو تہائی اکثریت سے کامیا ب کرایا ۔انہوںنے کہا کہ گلگت بلتستان کے تمام مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کو فخر ہے کہ ہم ا ٓ پ کی جماعت کا حصہ ہیں اور آپ کے کارکن ہیں۔ وزیراعظم پاکستان نے اکنامک کوریڈور کے منصوبے کا آغاز کیا ہے جس کی وجہ سے جی بی کے عوام نے اس خوشحالی اور تعمیر و ترقی کے ایجنڈے کو سپورٹ کیا اور مسلم لیگ (ن) کو دو تہائی اکثریت سے مینڈیٹ دیا ۔ گلگت بلتستان میں بجلی پیدا کرنے کے وسیع مواقع موجود ہیں گلگت بلتستان کو انرجی کوریڈور بھی وزیر اعظم پاکستان محمد نواز شریف بنائیں گے دیامیر بھاشہ ڈیم ،بونجی ٹنل اور سینکڑوں انرجی کے منصوبے ہیں جن پر وفاقی حکومت نے کام شروع کیا ہے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ گلگت بلتستان پاکستان کے لیے اکنامک کوریڈور بھی ہے اور انرجی کوریڈور بھی ۔ دیگر صوبے ڈیموں کی مخالفت کرتے ہیں لیکن یہاں کے لوگ اپنے گھر اور اپنی زمینیں دے رہے ہیں اور کہتے ہیں کہ یہاں پر ڈیم بنائیں ملک کی خوشحالی کے لیے ۔ وزیراعظم پاکستان آئندہ بھی ہماری رہنمائی جاری رکھیں گے جو تعمیر و ترقی کا ایجنڈا قائد عوام نے ہمیں بتایا ہے اسکو لے کر آگے بڑھا رہے ہیں اس وجہ سے مختصر عرصے میں نظام کو بہتر کرنے کی کوشش کی ہے ، گڈگورننس کو یقینی بنانے میرٹ کی بالادستی کے لیے اقدامات کیے ہیں پہلی مرتبہ اساتذہ این ٹی ایس کے تحت بھرتی ہو رہے ہیں ۔ ایف پی ایس سی کے تحت آفسران کی بھرتیا ں شروع کی گئی ہیں جس کی وجہ سے نوجوانوں میں امید پیدا ہوئی ہے صوبے میں جزاءو سزاءکا نظام متعارف کرایا گیا ہے۔ وزیراعظم پاکستان و قائد عوام نے سیلاب میں گلگت بلتستان کے عوام سے محبت ظاہر ہوتی ہے۔