پاکستانی ڈرون کی کارروائی، متعدد 'دہشتگرد' ہلاک


اسلام آباد: پاکستانی ساختہ ڈرون براق کی وفاق کے زیر انتظام جنوبی وزیرستان میں کارروائی سے متعدد مبینہ دہشتگرد ہلاک ہوگئے ہیں۔ ڈان نیوز نے آئی ایس پی آر کے حوالے سے بتایا کہ پاکستانی ساختہ ڈورن "براق" نے جنوبی وزیرستان میں مبینہ دہشتگردوں کے کئی ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق، اس کارروائی میں متعدد مبینہ دہشتگرد ہلاک ہوگئے ہیں۔ مزید پڑھیں: پاکستانی ڈرون کی پہلی کارروائی، 3 'دہشتگرد' ہلاک علاقے میں آزاد میڈیا کی رسائی نہ ہونے کی وجہ سے تمام تر تفصیلات آئی ایس پی آر کی جانب سے فراہم کی جاتی ہیں، اس لیے عمومی طور پر ان تفصیلات کی تصدیق نہیں ہو پاتی۔ خیال رہے کہ مقامی سطح پر تیار کردہ ڈرون طیارہ براق کو اس سے پہلے بھی دہشت گردوں کے خلاف استعمال کیا جاچکا ہے۔ براق نے اپنی پہلی کارروائی گزشتہ ماہ شمالی وزیرستان میں کی تھی جس کے دوران تین ہائی پروفائل مبینہ دہشت گردوں کی ہلاکت کی اطلاعات تھیں۔ یہ بھی پڑھیں: پاکستان کا مسلح ڈرون کا کامیاب تجربہ حکومت اور کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے درمیان امن مذاکرات کی ناکامی اور کراچی ایئرپورٹ پر حملے کے بعد پاک فوج نے 15 جون 2014 کو آپریشن ضرب عضب کا آغاز کیا تھا جس کے دوران اب تک ملک بھر میں سیکڑوں مبینہ دہشت گردوں کو ہلاک جبکہ متعدد کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔ رواں سال مارچ میں پاکستانی فوج نے براق کا کامیاب تجربہ کیا تھا جو اہداف کو 100 فیصدکامیابی کے ساتھ نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ براق ہر قسم کے موسم میں پرواز کرسکتا ہے اور یہ لیزر گائیڈ میزائل سے مسلح ہے۔