نہایت اهم مسئلہ : بهت سے لوگ ان شاء اللہ کے جملے کو اسطرح لکھتے ہیں. انشاء اللہ

نہایت اهم مسئلہ

بهت سے لوگ ان شاء اللہ کے جملے کو اسطرح لکھتے ہیں.

انشاء اللہ

جوکہ معنی کے اعتبار سے غلط ہے اس میسیج کے بعد امید کامل ہے دوست واحباب اس فحش غلطی سے اجتناب کریں گے

لفظ "انشاء" جسکا مطلب ہے "تخلیق کیا گیا" ( پیدا کیا گیا)

لیکن اگر "انشاءاللہ" کا مطلب دیکھا جائے تو "اللہ تعالى كي تخلیق" ( نعوذ با اللہ)

تو اس بات سے صاف ظاہر ہے کہ لفظ "انشاء" کو لفظ "اللہ کے ساتھ لکھنا بالکل غلط ہے

۔۔

اسکے لئے قرآن کی کچھ آیات ہیں جن میں لفظ "انشاء" تنہا استعمال ہوا ہے ۔۔

1. وَهوَ الَّذِی أَنْشَأَ لَکُمُ السَّمْعَ وَالْأَبْصَارَ وَالْأَفْئِدَۃَ قَلِیلًا مَا تَشْکُرُونَ – (المومن), 78

2. قُلْ سِیرُوا فِی الْأَرْضِ فَانْظُرُوا کَیْفَ بَدَأَ الْخَلْقَ ثُمَّ اللَّه یُنْشِئُ النَّشْأَۃَ الْآَخِرَۃَ إِنَّ اللَّہَ عَلَی کُلِّ شَیْء ٍ قَدِیر, ـ (العنکبوت) 20

3. إِنَّا أَنْشَأْنَاهنَّ إِنْشَاء ً – (الواقعہ) , 35

ان آیات سے صاف ظاہر ہے کہ "انشاء" کے ساتھ کہیں "اللہ" نہیں لکھا گیا کیونکہ یہ لفظ الگ معنی رکھتا ہے۔۔
لفظ "ان شاءاللہ" جسکا مطلب ہے" اگر اللہ نے چاہا"

"ان" کا معنی ہے "اگر"
"شاء" کا معنی ہے "چاہا"
"اللہ" کا مطلب "اللہ نے"
تو لفظ "ان شاءاللہ" ہی درست ہے جیساکہ آیات میں بھی واضح ہے ۔۔

1. وَإِنَّا إِنْ شَاء َ اللَّه لَمُہْتَدُونَ – (البقرہ) 70

2. وَقَالَ ادْخُلُوا مِصْرَ إِنْ شَاء َ اللَّه آَمِنِینَ –(یوسف) 99

3. قَالَ سَتَجِدُنِی إِنْ شَاء َ اللَّه صَابِرًا وَلَا أَعْصِی لَکَ أَمْرًا – (الکہف) 69

4. سَتَجِدُنِی إِنْ شَاء َ اللَّه مِنَ الصَّالِحِینَ – (القصاص) 27

ان آیات سے ثابت ہے کہ لفظ "ان شاءاللہ" کا مطلب ہے "اگر اللہ نے چاہا" تو ایسے لکھنا بالکل درست ہے.

۔۔۔۔ اسکی مزید وضاحت کے لئے کچھ احادیث بھی ہیں جن سے ثابت ہے کہ نبی پاک ﷺ اور صحابہ اکرام بھی

"ان شاءاللہ" لکھتے آئے ہیں۔۔

1. فَقَالَ لَه رَسُولُ اللَّہِ صَلَّی اللَّه عَلَیْہِ وَسَلَّمَ سَأَفْعَلُ إِنْ شَاء َ اللہ (صحیح بخاری) #407

2. لِکُلِّ نَبِیٍّ دَعْوَۃٌ یَدْعُوہَا فَأَنَا أُرِیدُ إِنْ شَاء َ اللَّه أَنْ أَخْتَبِئَ دَعْوَتِی شَفَاعَۃً لِأُمَّتِی یَوْمَ الْقِیَامَۃِ –
(صحیح مسلم) #295

3. إِنَّہَا لَرُؤْیَا حَقٌّ إِنْ شَاء َ اللَّه – (سنن ابی داؤد) #421

4. أَنَّ رَسُولَ اللَّہِ صَلَّی اللَّه عَلَیْہِ وَسَلَّمَ قَالَ مَنْ حَلَفَ عَلَی یَمِینٍ فَقَالَ إِنْ شَاء َ اللَّه فَلَا حِنْثَ عَلَیْہِ – (ترمذی) #1451

عرب ممالک میں یہ لفظ اكثر درست لکھا جاتا ہے
لیکن عجم ممالک جہاں عربی نہیں بولی جاتی جن میں پاکستان،، انڈیا اور بنگلہ دیش وغیرہ ان ممالک کے مسلمان کم علمی میں

🚫 "انشاءاللہ" 🚫

لکھتے ہیں جوکہ مکمل طور پر غلط ہے ۔۔
اور اکثر ہم مشرقی مسلمان اپنے مسجز اور چیٹ میں "انشاءاللہ"
لکھ دیتے ہیں ۔۔
تو اوپر کی ساری وضاحت سے ثابت ہوا کہ

✔"ان شاءاللہ" ✔

صحیح لفظ ہے ۔۔ آئندہ ایسے ہی لکھئے اور اللہ ہماری خطا معاف فرمائے "بےشک اللہ ہی بخشش فرمانے والا ہے".