Search This Blog

ویب سائٹ برائے فروخت ہے

ویب سائٹ برائے فروخت ہے
ملین ویزیٹرز اور تمام سوشل میڈیا پروفائل اور پیچ کے ساتھ

GB

GB

Shigar

Shigar

Churkah

Churkah

رمضانُ المبارک کے اَحکام ( اعتکاف )



(۵) اعتکاف 
لغوی اور شرعی معنیٰ:اعتکاف لغت میں بند رہنے کا نام ہے اور شرعاً مسجد میں مخصوص طریقہ سے بیٹھنے کا نام ہے…اعتکاف سنت نبوی ہے، آپ رمضان اور غیر رمضان میں اعتکاف بیٹھتے۔ غیر رمضان کی نسبت رمضان میں اور پہلے دو عشرہ کی نسبت آخر عشرہ میں اعتکاف بیٹھنا افضل ہے۔

اعتکاف کی فضیلت:

اگر کوئی شخص صرف اللہ کی رضا جوئی کی خاطر ایک دن اعتکاف بیٹھ جائے اللہ تعالیٰ اس کے اور آگ کے درمیان تین ایسی خندقیں بنا دیتے ہیں جن میں ہر ایک کادرمیانی فاصلہ مشرق و مغرب سے زیادہ ہوتا ہے۔ (طبرانی بسند حسن

اعتکاف کی شرائط و اَحکام
۱۔ اعتکاف کے لئے مسجدشرط ہے، بعض علماء نے جامع مسجد کی شرط لگائی ہے۔
۲۔ اعتکاف یا روزہ مشروع ہےشرط نہیں۔
۳۔ اعتکاف ایک دن یا رات بھی ہوسکتا ہے بلکہ اس سے کم بھی (بخاری ا زعمر… عبدالرزاق از یعلی بن امیہ ) (فتح الباری)

محرماتِ اعتکاف
۱۔ جماع… حسن بصری اور زہری نے اس پر کفارہ بھی مقرر کیا ہے۔
۲۔ عیادت نہ کرے۔
۳۔ عورت سے بوس و کنار اور معانقہ وغیرہ سے پرہیز کرے کیونکہ آنحضرت سے اعتکاف کے دوران یہ ثابت نہیں۔ (زاد المعاد)
۴۔ سوائے ضرورتِ انسانی کے مسجد سے باہر نہ نکلے۔
۵۔ جنازہ میں شرکت نہ کرے۔ (ابوداود از عائشہ موقوفاً)
۶۔ عورت خاوند کی اجازت کے بغیر اعتکاف نہ بیٹھے۔ (ابوداود از عائشہ)

مباحاتِ اعتکاف
۱۔ نہانا، خوشبو یا تیل وغیرہ لگانا (بخاری از عائشہ )
۲۔ سر کا مونڈنا، ناخن وغیرہ کاٹنا۔
۳۔ مسجد میں وضو کرنا ۔(بیہقی بسند جید)
۴۔ خیمہ لگانا (متفق علیہ از عائشہو ابوسعید خدری)
۵۔ بستر یا چارپائی بچھانا (ابن ماجہ، بیہقی از ابن عمر باسناد قریب من الحسن)
۶۔ عورت کا خاوند کی زیارت اور خاوند کا مسجد کے دروازے تک الوداع کرنا (متفق علیہ از حفصہ)
۷۔ عورت کا خاوند کے بالوں کی کنگھی کرنا۔ (بخاری از عائشہ)
۸۔ معتکف ضروری بات کرسکتاہے۔ (بخاری از صفیہ)
۹۔ معتکف کے لئے مخصوص جگہ کا انتخاب جائز ہے بشرطیکہ نمازیوں کو دقت نہ ہو۔ (ابوداود از عائشہ)
۱۰۔ مستحاضہ عورت بھی اعتکاف بیٹھ سکتی ہے (متفق علیہ از عائشہ)
۱۱۔ عورت اکیلی یا خاوند کے ساتھ مل کر اعتکاف بیٹھنے کی مجاز ہے۔ (بخاری، ابوداود از عائشہ)

جائے اعتکاف میں داخلہ

رمضان کے آخری نو یا دس دن کیلئے اعتکاف بیٹھنا ہو تو اکیسویں تاریخ فجر کی نماز پڑھ کر اعتکاف گاہ میں داخل ہوجائے(
۷۴) اور شوال کا چاند نظر آنے تک بحالت ِاعتکاف رہے (بخاری،مسلم، ابوداود)
شوال کے چھ روزے
رسول اللہ
نے فرمایا جوشخص رمضان کے پورے روزے رکھ کر شوال کے چھ روزے بھی رکھ لے، وہ گویا سال بھر روزہ دار رہا (مسلم وغیرہ از ابوایوب انصاری) یہ روزے اکٹھے یا علیحدہ علیحدہ شروع شوال یا درمیان یا آخر میں بھی رکھے جاسکتے ہیں۔

Share on Google Plus

About GB NEWS ONE

This is a short description in the author block about the author. You edit it by entering text in the "Biographical Info" field in the user admin panel.