دنیا سے ڈر کے تیرے کوچے میں آیا ہوں میں

♡♡♡ از قلم :یاسین رقم ♡♡♡
دنیا سے ڈر کے تیرے کوچے میں آیا ہوں میں
سب کو چھوڑا بس تیری امیدیں لایا ہوں میں

مجھ کو ٹھکرا کے خوش فہمی میں مت رہنا ناداں!
سوچا کیسے؟ تم میں اک لمحہ بھی کھویا ہوں میں

آئینہ جب بھی دیکھوں، تیری صورت آتی ہے
کیسے سمجھاؤں؟ کہ میں تو اور تو گویا ہوں میں

میرے قلبِ مضطر پر کیا گزرا، تو کیا جانے؟
میں خود ہی یہ دیکھوں کہ کیا تھا اور اب کیا ہوں میں

چہرے پر رعنائی آئی ہے، وجہ اس کی سن لے
جس کو عرصے سے کھویا تھا اس کو پایا ہوں میں