مشق سخن جاری رکھ

YaSin SaMi

تو آجا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔

دیواریں
مجھ سے اکثر
باتیں کرتی ہیں
میں سنتا رہتا ہوں

پھر جب سناٹا
چھا جاتا ہے
ہر سو ویرانی ہو جاتی ہے
تنہائی کے عالم میں
تیرے دل کی سب خبریں
لاتی ہیں یہ دیواریں
مجھ سے کہتی ہیں
پھر سو جاتی ہیں

میں تنہا سوچوں میں گم رہتا ہوں
تجھ بِن
حجرہ میرا سنساں
دل میرا غلطان وپیچاں
چہرہ میرا پھیکا
رنگ میرا روکھا 
رہتا ہے

میں خواہاں ہوں
شور وغوغے کا
گہما گہمی کا

تو آجا
میرے ہمدم
بس اب
تو آجا

یاسین سامیؔ، کویت