مجھ کو زندگی نے دکھ کے سوا دیا کیا ہے؟

♡♡♡ از قلم : یاسین سامی ♡♡♡
مجھ کو زندگی نے دکھ کے سوا دیا کیا ہے؟
بات گر نہیں ایسی تو مجھے ہوا کیا ہے؟

ان دنوں نجانے کیوں اضطراب طاری ہے
یہ مرا خدا جانے ذہن میں بسا کیا ہے؟

چھوڑ دو محبت کے ان سبھی فسانوں کو
یا بتاؤ رانجھوں کو آج تک ملا کیا ہے؟

میں نے تو سبھی رشتے جگ سے توڑ ڈالے ہیں
ما سوائے دکھ  اس نےاور کچھ دیا کیا ہے؟

خواب میں بھی ملنا اب ترک کر دیا تو نے
صرف یہ بتا، میں نے آخرش کِیا کیا ہے؟

اے مرے خدا مجھ کو وہ زباں عطا کر دے
جو تجھے بتا پائے میری التجا کیا ہے؟

زندگی نے پوچھا ہے آخرش یہ سامیؔ سے
آخری تمنا کیا، آخری دعا کیا ہے؟