بلتی طالبان


اہل بلتستان کو مبارک ! صدبارمبارک !بار بار مبارک ! اب ہم بهی سر اٹها کے جی سکتے ہیں."پنجابی طالبان "کا نام سن سن کے ہم احساس کمتری کے شکار ہوئے تهے.کہ زندگی کے ہرشعبے میں پنجابیوں نے ہمارا استحصال کیا ہے.چلو کہیں تو ہم برابری کر پائے.سنی باپ ، نوربخشی ماں اور شیعہ تایوں چچوں کی سہہ رنگی لیے مگر تینوں فرقوں سے لا تعلق اس شخص کا تعلق چهوربٹ سے بتایا جاتا ہے.جو بنے ہیں تحریک طالبان کے نئے ترجمان...خالد خراسانی...خیر اہل بلتستان کا یہ پہلا احسان تو نہیں ہے خطے پہ اور بهی ان گنت احسانات ہیں...مہدی شاہ کی شکل میں.....جعفر کی شکل میں...ویسے طالبان اور ان لیڈران میں منطقی طور پہ کچهه خاص فرق بهی تو نہیں ہے ......دونوں کا مقصد ایک ......دونوں کا مشن مشترک.....دونوں ہی عوام کے قاتل!!!
آپ کو حیرت ہوگی .....مگر حقیقت یہی ہے...طالبان لوگوں کو دھماکوں ، خودکش حملوں اور گولیوں سے قتل کرتے ہیں...لیڈران لوگوں کو کرپشن ، لوٹ مار ، غربت وافلاس سے...گذشتہ چار سالوں میں گندم کی بوری پہ نہیں ، گندم کلو پہ نہیں گندم کے دانے دانے پہ قوم کو لوٹا گیا...غریبوں کے چولہوں کو ٹھنڈا کیا گیا...ہسپتالوں میں بیمار لاعلاج ....اسکولز میں عمارتیں خستہ حال ....دفتروں میں رشوت کا کاروبار...اور اسلام آباد میں جعفر صاحب کا محل تیار...دونوں کا نشانہ غریب ہیں .....لیڈران ہو یا طالبان....دونوں ہی غریب کو مار رہے ہیں...سو بلتستان والو تمہارا یہ احسان.....!!!